Badtameezi Achee Baat Nahi | Kids Corner Story

271
عمیرا اور عامر دو بہن بھائی تھے اور ایک اسکول میں پڑھتے تھے۔ ایک دن اسکول سے واپسی پر عامر نے ایک لڑکے کے ساتھ لڑائی شروع کردی، عمیرا نے اسے منع بھی کیا کہ لڑائی جھگڑا اچھی بات نہیں مگر عامر نہ مانا اور لڑائی جاری رکھی، نتیجہ یہ ہوا کہ اسے کافی چوٹیں لگیں۔ جب دونوں بہن بھائی گھر پہنچے تو ان کی امی نے عامر کی چوٹ کے بارے میں پوچھا، عامر نے جھوٹ بولتے ہوئے کہا کہ وہ راستے میں گر گیا تھا اس لئے چوٹ لگ لگی ہے، عامر کی امی کو یقین نہ آیا، کیونکہ یہ چوٹ گرنے والی چوٹ سے مختلف تھی اور ان کو یہ بھی معلوم تھا کہ عامر اکثر جھوٹ بولتا ہے، تب انہوں نے عمیرا سے سچائی جاننے کا فیصلہ کیا۔ عمیرا اپنے کمرے میں ہوم ورک کر نے کے بعد کھیل رہی تھی کہ امی وہاں آگئیں، ’’عمیرا بیٹی! عامر کو چوٹ کیسے لگی ہے؟‘‘ عمیرا نے سچی بات صاف بتادی کہ عامر کی ایک لڑکے سے لڑائی ہوگئی تھی جس میں اسے چوٹ لگی ہے۔ امی کا شک درست ثابت ہوا، انہوں نے عامر سے سوال کیا، ’’تم نے جھوٹ کیوں کہا؟‘‘ تب جواب دینے کے بجائے وہ ناراض ہوگیا اور کھانا کھائے بغیر سوگیا۔ صبح بھی جب عامر بغیر ناشتہ کے اسکول جانے لگا تو اس کی امی نے کہا کہ بغیر ناشتہ کئے اسکول نہ جائو ورنہ پڑھائی اچھے طریقے سے نہ ہوگی، مگر عامر نے امی کی بات نہ سنی اور اسکول چلا گیا۔ کلاس میں استاد صاحب نے ہوم ورک چیک کروانے کے لئے کہا تو عامر کو یاد آیا کہ رات کو تو وہ غصے میں جلد ہی سوگیا تھا اور ہوم ورک تو اس نے کیا ہی نہیں، جب اس کی باری آئی تو استاد صاحب نے عامر سے کہا کہ اپنی کاپی چیک کروائو، عامر نے غصے سے کہا کہ میں نے کام نہیں کیا،اس پر استاد صاحب نے کہا کہ نہیں کیا تو پھر جماعت سے باہر چلے جائو۔ عامرنے باہر جانے سے انکار کردیا اور بدتمیزی کرنے لگا لیکن استاد صاحب نے فیصلہ نہ بدلا، اس کی سزا برقرار رکھی۔ عامر باہر نکل کر کچھ دیر تو کھڑا رہا پھر موقع پاکر اسکول سے باہر نکل گیا، باہر نکل کر عامر نے سوچا کہ اب کیا کیا جائے، اچانک اس کی نظر ایک بینچ پر پڑی، تب وہ بینچ پر بیٹھ گیا ، کچھ دیر بیٹھنے کے بعد جب …
(جاری ہے)